صدائے دل ۔۔۔۔۔۔ کاوش زبان و قلم : علامہ مفتی خالد کمال مصباحی۔۔۔

*صدائے دِل*

*'''''''''''''''''''''''''''''''''''''''''''''''''''''''''''''''

علامہ مفتی خالد کمال مصباحی

بیاباں ہو کہ بحر وبر ہو یا کانٹوں بھری راہیں،
کہاں رکتا ہے منزل کے سوا اب کارواں اپنا۔

کھڑی کردیں رکاوٹ دشمنِ جاں, لاکھ راہوں میں،
سبھی کو روند کر بڑھ جائیگا سیل رواں اپنا ۔

مظالم سے وہ باز آتا نہیں ظالم زمانے میں،
کبھی زخم جگر بھی رنگ لائے ناگہاں اپنا۔

وطن پر آنچ آجائے گوارہ ہو، تو کیسے،
لہو سے ہم نے سینچا ہے یہ پیارا گلستاں اپنا۔

مٹانے کی ہزار سازشیں کر گردشِ دوراں،
نہ جائے گا کبھی جوشِ عمل یہ رائیگاں اپنا۔

سنادو داستانِ رنج و غم دنیا کے لوگوں کو ،
چھپانے سے بھی چھپ سکتا نہیں دردِ نہاں اپنا۔

رہ حق پر رہو *خالد* ہمیشہ گامزن یوں ہی،
نظر سے دور مت کرنا کبھی منزلِ نشاں اپنا

____کاوش زبان و قلم____
شیدائے اُردو نقاد اردو ادب
حضرت مفتی *خالد کمال مصباحی دیناج پوری*

      خادم درس و افتاء
 مدرسہ اشرف العلوم لکھی پور بازار،چوپڑا،
اتر دیناجپور مغربی بنگال
Share on Google Plus

About Md Firoz Alam

Ut wisi enim ad minim veniam, quis nostrud exerci tation ullamcorper suscipit lobortis nisl ut aliquip ex ea commodo consequat. Duis autem vel eum iriure dolor in hendrerit in vulputate velit esse molestie consequat, vel illum dolore eu feugiat nulla facilisis at vero eros et accumsan et iusto odio dignissim qui blandit praesent luptatum zzril delenit augue duis.

0 تبصرے:

ایک تبصرہ شائع کریں