غزل۔۔۔۔۔ حالات حاضرہ پر : دلنواز خان

غزل

،دلنواز خان 
حق میں رہ کر حقیقت نہیں جانتے

دل رکھتے ہو محبت نہیں جانتے


ہم تو ہرجایٔ تھے وہ بھی تو غیر تھا
کہتے ہو اوروں کی صحبت نہیں جانتے

بے علم نہ بنو تدبیر ھے عالم کا
آج حاکم یہ سارے حکومت نہیں جانتے

ہر صبح بے نور ہے ظلم کا بول بالا ہے
صبر کر یہ اللہ کی عدالت نہیں جانتے

قوم غافل ہے ڈرتا ہے زمانے سے
اے امتِ مرسل کیا مصیبت نہیں جانتے

مساوات کا سہرا بکھر نہ جائے کہیں
نواز ٓ وے اتحاد کی طاقت نہیں جانتے

از:محمد دلنواز خان
شعبہ اردو
مولانا آزاد کالج،

کلکتہ یونیورسٹی

Share on Google Plus

About Md Firoz Alam

Ut wisi enim ad minim veniam, quis nostrud exerci tation ullamcorper suscipit lobortis nisl ut aliquip ex ea commodo consequat. Duis autem vel eum iriure dolor in hendrerit in vulputate velit esse molestie consequat, vel illum dolore eu feugiat nulla facilisis at vero eros et accumsan et iusto odio dignissim qui blandit praesent luptatum zzril delenit augue duis.

0 تبصرے:

ایک تبصرہ شائع کریں