دلکش و دلفریب انداز میں منایا گیا عرس حضور اشرف الاولیاء۔۔۔آن لائن ۔۔۔

🌹دلکش و دلفریب انداز میں منایاگیاعرس حضور اشرف الاولیاء

یوٹیوب چینل "Alayee Network" اور اردو ویب پورٹل "قلم کی جسارت" کے زیرِ اہتمام قدیم روایات سے ہٹ کر 13،جولائی بروز پیر بعد نماز عشاء آن لائن عرس حضور اشرف الاولیاء حضرت علامہ مولانا سید شاہ مجتبٰی اشرف اشرفی جیلانی کچھوچھوی علیہ الرحمۃ والرضوان،(بانی مخدوم اشرف مشن) کا انعقاد کیا گیا ۔ اس طرز جدید پر مشتمل کانفرنس کی سرپرستی وصدارت فرما رہے تھے پیر طریقت رہبر شریعت غواص بحر معرفت حضور تاج الاولیاء حضرت علامہ مولانا ڈاکٹر الحاج سید جلال الدین اشرف اشرفی جیلانی دام ظلہ النورانی کچھوچھہ مقدسہ ،سربراہ اعلیٰ مخدوم اشرف مشن پنڈوہ شریف مالدہ مغربی بنگال ۔ ہوسٹنگ کررہے تھے مفتی محمدشمس تبریزقادری علیمی و مولانا محمد فیروز عالم علائی ۔ اس کانفرنس میں انڈیا کے مفتیان کرام، علماء ذی الاحترام نے شرکت فرمائی ۔ اس نورانی کانفرنس کا آغاز شاعر اسلام قاری کمال الدین نقشبندی  کی قراءت سے ہوا اور حمدباری تعالیٰ و نعت و منقبت کے اشعار اچھوتے انداز میں پیش کئے گئے ۔ اس کے بعد علامہ قربان علی تیغی کلکتوی نے حضور اشرف الاولیاء کی زندگی پر اختصاراً خطاب فرمایا، پھر ثنا خوان رسول اشرف الشعراء مولانا عثمان غنی اشرفی دارجلنگ نے نعت رسول پاک اور منقبتِ حضور اشرف الاولیاء سناکر سامعین و ناظرین کا دل جیت لیا۔اس پروگرام میں خصوصی مہمان حضرت علامہ مولانا حافظ وقاری مفتی ڈاکٹر سید منظر الاسلام الازہری امریکہ سے شامل ہوئے آپ نے اپنے 20 منٹ کے خطاب میں تصوف کی اہمیت و افادیت اور صوفیا کی خدمات پر محققانہ اسلوب میں روشنی ڈالی ۔ اس کے بعد آل رسول حضرت مولانا سید محمد فیضان اشرف اشرفی جیلانی اور حضرت مولانا مفتی کمال الدین اشرفی مصباحی نے صاحب عرس کی زندگی کے الگ الگ سبق آموز گوشے اجاگر کیے، اور مناظر اسلام حضرت علامہ مولانا مفتی طاہر حسین مصباحی نے وقت کی قلت کے پیش نظر منقبت کے چند اشعار اپنے والہانہ انداز میں پیش کرنے پر ہی اکتفا کیا ۔ اخیر میں پیر طریقت جانشین حضور اشرف الاولیاء حضرت علامہ مولانا ڈاکٹر الحاج سید جلال الدین اشرف اشرفی جیلانی دام ظلہ النورانی نے اپنے دعائیہ کلمات کے ذریعے مریدین و متوسلین اور معتقدین کو عرس کا مفہوم نہایت عمدہ اور سادہ، شستہ انداز میں بتایا ۔آپ نے فرمایا : عرس تفریح کی چیز نہیں ہے، عرس کھیل تماشہ کی کوئی چیز نہیں ہے، عرس منت و سماجت کی چیز نہیں ہے ۔عرس ڈورے باندھنے اور ڈھیر ساری چادریں پیش کرنے کی لیے نہیں ہے۔ عرس اس لیے منائیں تاکہ اللہ کے ولی کی زندگی ہم اپنے سامنے رکھ کر اپنے اندر خوبیاں تلاش کریں اور اپنے اندر کی برائیاں دور کریں! عرس اس لیے منایا جاتا ہے ۔ عرس اس لیے نہیں منایا جاتا ہے کہ سرکش دیکھ لیے جائیں، ہاتھ اور گلے میں ڈورے باندھے جائیں، میلہ سے برتن خرید کر گھروں میں رکھ لیے جائیں ان سب خرافات کے لیے عرس نہیں ہوتا، عرس تو اس لیے ہوتا ہے کہ ہم اس بزرگ کی زندگی کو اپنے لیے مشعل راہ بنا کر اپنی زندگی میں انقلاب لائیں ۔ حضور اشرف الاولیاء کی زندگی ایسی تھی کہ آپ خود مراقبہ اور محاسبہ کیا کرتے اور اپنے قریب رہنے والوں کو مراقبہ و محاسبہ کی دعوت دیتے تھے ۔ پھر جملہ ناظرین و سامعین کے ساتھ حضور تاج الاولیاء نے مراقبہ و محاسبہ فرمایا اور سبھوں سے سچی توبہ کرائی ۔اور آپ کی رقت آمیز دعاؤں پر یہ پروگرام بحسن و خوبی اختتام پذیر ہوا ۔ اللہ تعالیٰ ہم سب پر فیضان حضور اشرف الاولیاء جاری فرمائے اور جملہ ارضی و سماوی حادثات و بلیات سے محفوظ رکھے ۔آمین بجاہ سید المرسلین صلی اللہ علیہ وسلم ۔
رپورٹ: شمس تبریز قادری علیمی و محمد فیروز عالم علاںٔی
Share on Google Plus

About Md Firoz Alam

Ut wisi enim ad minim veniam, quis nostrud exerci tation ullamcorper suscipit lobortis nisl ut aliquip ex ea commodo consequat. Duis autem vel eum iriure dolor in hendrerit in vulputate velit esse molestie consequat, vel illum dolore eu feugiat nulla facilisis at vero eros et accumsan et iusto odio dignissim qui blandit praesent luptatum zzril delenit augue duis.

0 تبصرے:

ایک تبصرہ شائع کریں